کراچی: واٹرکمیشن کا پانی کی ترسیل، تقسیم کا کمپیوٹرائزڈ سسٹم قائم کرنیکا حکم | پاکستان

فوٹو:فائل

کراچی: سربراہ کمیشن جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم نے پانی کی ترسیل اور تقسیم کا کمپیوٹرائزڈ سینٹرلائزڈ سسٹم قائم کرنے کا حکم دیا ہے۔ 

سندھ ہائیکورٹ میں سربراہ واٹر کمیشن نے پانی کی تقسیم اور اس میں حائل رکاوٹوں سے متعلق سماعت کی، اس موقع پر میئر کراچی وسیم اختر، سیکرٹری بلدیات، کے الیکٹرک کے وکیل اور دیگر پیش ہوئے۔

سربراہ واٹر کمیشن نے پانی کی ترسیل اور تقسیم کی پیمائش کے لیے میٹر لگوانے اور پمپنگ اسٹیشنز کی تفصیلات ویب سائٹ پر رکھنے کی ہدایت کی۔

واٹر کمیشن نے پانی کی ترسیل اور تقسیم کا کمپیوٹرائزڈ سینٹرلائزڈ سسٹم قائم کرنے کا بھی حکم دیا جس پر  سیکرٹری بلدیات نے کہا کہ ٹیکنیکل کمیٹی کی منظوری کے بعد ہی رقم جاری ہوسکتی ہے۔

کمیشن کے سربراہ جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم نے چیئرمین ترقی و منصوبہ بندی کمیشن سے مشاورت کر کے معاملہ حل کرنے کی ہدایت کی۔

سائٹ ایسوسی ایشن کے وکیل نے کمیشن کو بتایا کہ وفاقی اور صوبائی حکومت کا کمبائنڈ ایفلوئنٹ ٹریٹمنٹ پلانٹ لگ رہا ہے جس پر سربراہ کمیشن نے کہا کہ یہ منصوبہ الگ ہے، فیکٹریوں کو اپنا ٹریٹمنٹ پلانٹ لگانا ہوگا۔

جس پر وکیل سائٹ ایسوسی ایشن کا کہنا تھا کہ کچھ وقت چاہیے فیکٹری مالکان پلانٹس لگانے کے لیے تیار ہیں جس پر سربراہ کمیشن نے کہا کہ جولائی سے زیادہ مہلت نہیں دے سکتے، جولائی تک پلانٹس فعال ہوجانے چاہییں، پلانٹس نہ لگے تو لوگ مریں گے۔

کمیشن نے سائٹ ایسوسی ایشن کو رپورٹ پیش کرنے کے لیے 2 مئی تک کی مہلت دے دی۔

سربراہ کمیشن نے آر او پلانٹس کی بجلی کاٹنے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا اور کہا کہ کیا کے الیکٹرک پر پاکستان کے آئین و قانون کا نفاذ ہوتا ہے، کراچی میں عام آدمی کو ویسے ہی پانی نہیں مل رہا۔

وکیل کے الیکٹرک نے عدالت کو بتایا کہ دسمبر سے بجلی کا بل ادا نہیں کیا گیا تھا اس لیے بجلی کاٹ دی، جس پر پاک اوسس کے وکیل نے کہا کہ ادائیگی میں 5 سال سے کبھی تاخیر نہیں ہوئی صرف اب 4 ماہ کی تاخیر ہوئی۔

سربراہ کمیش نے کہا کہ بجلی کا بل پاک اوسس کی نہیں سندھ حکومت کی ذمےداری ہے، وکیل کے الیکٹرک نے کمیشن کو بتایا کہ آر او پلانٹس کی بجلی بحال کردی گئی ہے تاہم سندھ حکومت پر کثیر رقم واجب الادا ہے وہ بھی دلوائیں۔

جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم نے اس پر کہا کہ آپ لوگوں کے مذاکرات جاری ہیں امید ہےمسئلہ حل ہوجائے گا۔

میئر کراچی وسیم اختر نے کمیشن کو بتایا کہ کئی مقامات پر کے الیکٹرک کی کیبلز سے خطرات ہیں، کیبلز ہٹانے کے لیے کے الیکٹرک سے تعاون کو تیار ہیں۔

سربراہ کمیشن نے کےالیکٹرک اور میئرکراچی کو فوکل پرسن کے ذریعے معاملات حل کرنے کی ہدایت کردی۔

Source link

The post کراچی: واٹرکمیشن کا پانی کی ترسیل، تقسیم کا کمپیوٹرائزڈ سسٹم قائم کرنیکا حکم | پاکستان appeared first on Savera.pk.



Source link

اپنا تبصرہ بھیجیں